زلفیں رکھنا سنت ہے

زلفیں رکھنا سنت ہے
سنت کے شیدائیوہمارے پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کریمہ یہی ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیشہ اپنے سر کے بال شریف پورے رکھے،کبھی نصف کان مبارک تک کبھی کان مبارک کی لواور بعض اوقات آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے گیسو شریف بڑھ جاتے تو مبارک شانوں کوجھوم جھوم کر چومنے لگتے (فیضان سنت)
ٹیکسٹ بک آف پریونیٹو سوشیل میڈیسن میں پرسنل ہا ئیجین کے سلسلہ میں لکھا ہے کہ زلفیں موسمی شدائدسے محفوظ کھنے کا لازمی اور قدرتی آلہ ہیں۔
عورتیں عام طور پر خوبصورتی کے لئے سر میں لمبے بال رکھتی ہیں اور مرد زلفیں اور داڑھی زینت اور وقار کے لئے رکھتے ہیں۔
بہر حال ان کی صفائی بھی بے حد اہمیت رکھتی ہے نیز حجاموں کو اپنے سامان کے صاف رکھنے میں تمام احتیاطی تدابیروں کو ملحوظ رکھنا چاہیے تا کہ پیپ پیدا کرنے والے جراثیم ،آتشک ،خارش اور جوڑوں کے تعدیہ وے نجات حاصل ہو۔(بحوالہ آداب صحت و پاکیزگی )
چلی ارجنٹائن کے ڈاکٹروں کی ایک ٹیم نے سروے کے بعد اس بات کو تسلیم کیا ہے جن لوگوں کے سر کے بال بالکل برابر ہوتے ہیں ایسے لوگ لو کی بیماریوں ،دماغی دباؤ اور گردوں کی برائٹ ڈزیزسے بچ جائیں گے۔
ماہر ڈاکٹروں کی ٹیم کے مطابق چونکہ بال سیاہ ہوتے ہیں سورج کی روشنی اور اس میں موجود تیز شعاعیں جب سر پر پڑتی ہیں تو ایک کیمیائی عمل شروع ہوجاتاہے
اگر بال ناہموار اور ابھرے ہوئے ہوں تو اس روشنی کی وہاں گردش زیادو ہو کر اس جگہ پر برے اثرات ڈالتی ہے اس لئے سر کے بال ہموار ہوں اورایسا زلفوں میں ممکن ہے اس لئے حدیث پاک میں کنگھا اور بال سنوارنے کی ہدایت کی ہے۔(سنت نبوی اور جدید سائنس)

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: