سر میں تیل اور کنگھا کرنے کی سنت میں حکمت اور فائدے

(سر میں تیل اور کنگھا کرنے کی سنت میں حکمت اور فائدے)
حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم سر انور کو کثرت سے تیل لگاتے تھے اور اپنی داڑھی شریف میں کنگھا فرماتے تھے اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم اپنے سر اقدس پر عمامہ شریف کے نیچے ایک کپڑا (سر بند )رکھتے تھے وہ کپڑا زیادہ تیل لگنے کی وجہ سے تیلی کا کپڑا معلوم ہوتا تھا۔(مشکوۃ،شمائل ترمذی ،رہبر زندگی)
سر میں قدرتی تیل کے مساج سے مرد اور خواتین بہت سی بیماریوں سے بچ سکتیں ہیں۔اس امر کا انکشاف ایوریریک تھراپی رپورٹ میں کہاگیا ہے۔رپورٹ کے مطابق مساج سے بیماریوں کا علاج صدیوں پرانا طریقہ ہے ۔ مساج سے جسم تروتازہ اور پرسکون ہو جاتا ہے۔بالخصوص خالص قدرتی تیل ہی مساج اضطراب اور بے چینی کی کیفیت کو ختم کرتا ہے۔نیز اس کی وجہ سے نبض کی رفتار بھی بہتر ہوجاتی ہے۔جلد کی اکثر بیماریوں کاعلاج قدرتی تیل کامساج ہی ہے۔جلد کی نگت نکھارنے اور جلد کو داغوں سے بچانے کے لئے مساج قدرتی تریاق ہے۔
درحقیقت قدرتی تیل جلد کی اندرونی تہوں میں جذب ہو کر جسم کومختلف بیماریوں کے وائرس سے محفوظ بناتاہے۔سب سے اہم بات یہ ہے کہ اس سے خون کی گردش جسم کے درجہ حرارت کے متوازی ہو جاتی ہے۔جس سے پور ا جسم خوبصورت اور تندرست ہوجاتا ہے۔گردن اور کندھوں کا مساج ڈیپریشن اور اینگزایٹی کو ختم کر دیتا ہے۔(روزنامہ جنگ)
مزید یہ کہ سر کامساج ذہنی دباؤ ،اعصابی کھچاؤ ،درد سر کے پرانے مریض،گردن کے پٹھوں کا درد ،شانوں کا درد ،نظر کی کمزوری،چہرے کی سرجری کے لئے بہت مفید ہے۔(سائنس اورانسان)
سر میں کنگھا کرنے سے ایک حرارت اور انرجی پیدا ہوتی ہے جو بالوں کے ذریعے جسم کے اعصابی نظام کو قوی کرتی ہے حتی کہ مسلسل کنگھا کرنا بالوں کو بڑھاتا اور انہیں گنھا کرتا ہے۔
کنگھا کرنے کی سنت میں ایک حکمت یہ بھی ہے اگر بالوں میں کنگھا نہ کیا جائے تو ان میں جراثیم اٹک جاتے ہیں۔جو اندر ہی اندر بڑھتے رہتے ہیں اور ایک وقت میں خطرناک کیفیت اختیار کر لیتے ہیں نیز کنگھا نہ کرنا جوؤں کے خطرات کو بھی بڑھادیتاہے۔
http://www.sunnatscience.blogspot.com

Advertisements

1 تبصرہ »

  1. NOOR said

    جزاک اللہ خیرا

RSS feed for comments on this post · TrackBack URI

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: